تازہ ترین

کراچی پاکستان کی امیدوں کا مرکز مگر

12-26-2012_19721_l_T

ٹارگٹ گیلنگ، بھتہ خوری،اغواہ برائے توان اور دشہت گردی کے حالیہ واقعات میں دن بدن اضافہ ہوتا جا رہا ہے ۔ حکومت اور انتظامیہ صرف دعوے کرتے نظر آتے ہیں آخر کراچی کا مستقبل کیا ہے۔روشنوں کا شہر میں قتل و غارت روز کا معمول بنتا جا رہا ہے۔ عوام اپنے انتخاب سے جن حکمرانوں کو ورٹ دیتے ہیں وہ وعدے کر کے  بھول جانے ہیں۔ حالیہ چند ماہ میں حکومت سندہ کی کارکردگی مایوس کن رہی ہے۔انتظامیہ مقاصد کے حصول میں مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے۔حالیہ سانحہصفورہ میں کتنی قیمتی جانوں کا ضیاع ہو ا اور انتظامیہ خواب غفلت کی نیند سو رہی تھی۔ اور جب ہوش آیا تو پانی سر سے گزر چکا تھا۔اور اس پر وزیر اعلی کا بیان کہ کچھ بھی ہو جاہیے استعفی نہیں دوں گا دھٹائی کی انتہا نہ کہے تو کیا کہے۔آخر کب تک عوام قربانی کا بکرا بنی رہے گی۔لاکھوں روپوں کی تنخواہ لینے والے یہ لوگ آخر کب یہ سمجھے گے کہ ان کی

کیا ذمداری ہے اس شہر کی۔اور حکومتی اراکان صرف پنجاب تک ہی ہیں اور صوبے ان کے اختیارات میں ہی نہیں ہے ۔خود وزیر اغظم ہی دو دن کے لئے شہر میں آتے ہیں اور پھر چلے جاتے ہیں۔آخر کب تک عوام ان نکھٹو سیاستدانوں کو برداشت کرتی رہے گی۔اور ان سیاستدانوں کو کب ملک ی خدمت کرنے کا خیال آئے گا ضرورت اور اہمیت یہ کہتی ہے کہ ان نکھٹو لوگوں کا عوام خود احتساب کرے اور سکیورٹی کے ادارے کو اہم اختیارات دئیے جائیں اور قانون نافذ کرنے والے ادارے ٹارگٹ گیلنگ، بھتہ خوری،اغواہ برائے توان اور دشہت گردی کے واقعات کی روک تھام میں اپنا کردار ادا کریں۔

Share to spread ...Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on Google+Share on LinkedInShare on StumbleUponDigg thisShare on TumblrShare on RedditPin on Pinterest

اپنی رائے دیجئے

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*