تازہ ترین

43 سو 13 ارب روپے حجم کا وفاقی بجٹ پیش کردیا گیا

364017-rt-1433559058-510-640x480

اسلام آباد۔۔۔۔۔ فاقی وزیرخزانہ اسحاق ڈارنے مالی سال 16-2015 کے لئے 43 کھرب 13 ارب روپے کا بجٹ پیش کردیا۔ جس میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں ساڑھے7 فیصد اضافہ جبکہ کم سے کم ماہانہ پینشن 13 ہزارروپے مقررکر نے کی تجویز دی گئی ۔ توانائی کاشعبہ حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے۔ دسمبر2017تک سسٹم میں 10ہزارمیگاواٹ بجلی شامل کریں گے، ہائیڈروپاور پراجیکٹ داسو کے پہلے مرحلے میں 52ارب مختص اوردیا مربھاشا کی زمین اور تعمیر کے لیے 21ارب روپے رکھے گئے ہیں ، نیلم جہلم منصوبہ کے لیے11ارب رکھے گئے ہیں۔فاقی وزیرخزانہ نے مزید کہا کہ ایچ ای سی کے 143منصوبوں کے لیے 20ارب 50کروڑ رکھے گئے ہیںاورایچ ای سی کے جاری منصوبوں کے لیے 51ارب روپے دیے جارہے ہیں۔ٹیکسٹائل پالیسی 2014-2019کے لیے 64ارب 15کروڑ کا مالیاتی پیکج دیا گیا ہے ۔ وزیر اعظم یوتھ بزنس لون اسکیم کے لیے شرح سود 8فیصد سے کم کرکے 6فیصد کردی گئی۔انہوں نے ایوان کو آگاہ کیا کہ وزیراعظم کی خصوصی اسکیموں کے لیے 20ارب روپے رکھے گئے ہیں ، بینظیرانکم سپورٹ پروگرام کا دائرہ کار50لاکھ خاندانوں تک بڑھانےکاہدف مقررکیا گیا ہے۔ فاقی وزیرخزانہ اسحاق ڈارنے کہا راچی کے لیے تحفہ دے رہے ہیںوہاں گرین لائن بس سروس بنے گی،گرین لائن بس منصوبہ دسمبر 2016 میں مکمل کیا جائے گا۔ وبائل فونزپرسیلز ٹیکس دوگنا کردیا گیا۔12ارب روپےکی لاگت سے یونیورسل ٹیلی سینٹرقائم کئے جائیں گے۔اسٹاک ایکسچینج میں سرمایہ کاری پر ٹیکس کریڈٹ کی حد 10 لاکھ سے بڑھا کر 15 لاکھ کردی گئی۔ ریلوے کےلئے مجموعی طورپر78ارب روپے رکھے ہیں ۔ جمہوری حکومت عوام اورپارلیمنٹ کوجوابدہ ہے۔تیسرےبجٹ میں ہماری کارکردگی واضح نظرآنےلگےگی۔

Share to spread ...Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on Google+Share on LinkedInShare on StumbleUponDigg thisShare on TumblrShare on RedditPin on Pinterest

اپنی رائے دیجئے

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*