تازہ ترین

وفاقی بجٹ ١٦-٢٠١٥ عوام کی ترجعحات کا محور

364017-rt-1433559058-510-640x480

وفاقی بجٹ ٢٠١٥-٢٠١٦ جمہوری حکومت کا تیسرا بجٹ ہے۔ پاکستانی عوام اس امید پر قائم تھے کہ اس دفعہ عوام کو ریلیف دیا جائے گا لیکن عوام کی تمام امیدیں دم توڑ گئی۔ دنیا کا کوئی بھی ملک ہو وہ بجٹ میں عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرتا ہے لیکن پاکستان میں عوام کو ریلیف فاہم کرنے کے بجائے انہی پر مہگائی کا تحفہ دے دیا جاتا ہے۔ ١٦-٢٠١٥ کے بجٹ میںسرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشنوں میں ساڑھے سات فیصد اضافے کیا گیا ہے۔اس کے علاوہ دودھ ، دہی ، مصالحہ ، دالوں سمیت منرل واٹر اور سبزیوں کی قیمتیں بھی بڑھا دی گئی ہیں۔ اب عوام کرے تو کیا کرے اگر عام روز مرہ کی چیزوں میں اضافہ ہو گیا ہے تو غریب آدمی تو ایک وقت کی روٹی بھی نصیب ہونا ناممکن نظر آتا ہے۔ حکومت عوام کی امیدوں کے بر خلاف بجٹ پیش کر کے کہتی ہے کہ یہ بجٹ معاشی خوشحالی کا باعث ہو گا مگر جب عام آدمی ہی ایک وقت کی روٹی کے لئے ترسے گا تو ملک میں معاشی خوشحالی تو دور کی بات عوام اپنے حق کے لئ سڑکوں پر آ جائیں گے۔ میں وفافی حکومت خاص کر کے وزیراعظم نواز شریف اور وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار سے درخواست کرتی ہوں گے خدارہ اپنا اپنا سوچن کے بجائے عوام کو ریلیف دینے کا سوچو ۔ عام آدمی کی بہتری کے لیے سوچو۔ اگر عوام کو ریلیف ملے گی تو وہ خوشحال ہو گی اور ملک میں بھی معاشی ترقی ہو گی۔ اور حکومت یہ نہ بھولے کے ملک کی ترقی میں آپ لوگوں کے ساتھ ساتھ پاکستانی عوام کا ہاتھ ہے۔اس لئے عوام کے وسائل حکومت کی اہم ترجع ہونی چاہیے۔

Share to spread ...Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on Google+Share on LinkedInShare on StumbleUponDigg thisShare on TumblrShare on RedditPin on Pinterest

اپنی رائے دیجئے

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*